Magrbi Dunia Mein Kam

Magrbi Dunia Mein Kam Karne Wali Aortein

Related image

مغربی دنیا ہم جنس پرستی سمیت کئی خباثتوں کو قانونی حیثیت دے چکی ہے اور اب وہاں خواتین نے مردوں کے ساتھ ایک ایسا کام شروع کر دیا ہے کہ جان کر ہی پاکستانی کانوں کو ہاتھ لگانے لگیں۔

Advertisements

میل آن لائن نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ برطانیہ اور امریکہ سمیت بیشتر مغربی ممالک میں نوکری کرنے والی خواتین پیسوں کے عوض مردوں سے جنسی خدمات حاصل کرنے لگی ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ ان کے پاس کسی مرد کے ساتھ مستقل تعلق استوار کرنے کے لیے وقت نہیں ہوتا کیونکہ وہ اپنے کام پر توجہ دینا چاہتی ہیں۔ برطانیہ اور امریکہ میں ایک مرد 150پاﺅنڈ (تقریباً 21ہزار روپے) فی گھنٹہ تک کی قیمت میں خواتین کو دستیاب ہوتا ہے۔

رپورٹ کے مطابق مردوں کے برعکس خواتین کرائے کے مرد کے ساتھ جنسی تعلق قائم کرنے سے قبل ان کے ساتھ کھانا کھانے یا کوئی ڈرنک لینے کو ترجیح دیتی ہیں۔ امریکہ ، برطانیہ، میکسیکو اور برازیل میں مردوں کی اسکارٹ سروسز خواتین کو بیک وقت کئی مرد دکھاتی ہیں جن میں سے اپنی پسند کا مرد وہ منتخب کر لیتی ہیں جبکہ بلغاریہ، یوراگوئے، ایستونیا و دیگر ممالک میں خواتین کو انتخاب کی سہولت نہیں دی جاتی بلکہ ان کے آرڈر پر ایک ہی مرد بھیج دیا جاتا ہے۔

رپورٹ کے مطابق خواتین ایسے مردوں کو ہزاروں پاﺅنڈ دینے کو تیار ہوتی ہیں جو ہفتہ وار چھٹیاں ان کے ساتھ رہنے پر آمادہ ہوں۔ اس وقت میکسیکو میں ’جسم فروش مردوں‘ کی تعداد سب سے زیادہ 14ہزار 531ہے۔دوسرے نمبر پر برازیل میں6ہزار 892، امریکہ میں3ہزار 481، برطانیہ میں2ہزار 926اور سپین میں 2ہزار 357مرد اسکارٹس موجود ہیں۔ یہ مرد بین الاقوامی سطح پر جنسی سروس مہیا کرتے ہیں اور ان کی سروس حاصل کرنے والی زیادہ تر خواتین عمر کی تیسری اور چوتھی دہائی میں ہوتی ہیں۔

لڑکی نے کہا کہ ہربار سرجری کروانے کے بعد وہ خود کو پہلے سے زیادہ حسین محسوس کرتی تھی لیکن اس کے باوجود اس کا دوست اسے ناپسند کرتا اور بے عزتی کرتا رہا، بار بار ناپسندیدہ لڑکی ہونے کا طعنہ دیتا جس کے بعد بوائے فرینڈ کو راغب کرنے کی غرض سےاس نے 6 ماہ کے دوران پلکوں،

ناک اور پیشانی سمیت چہرے کی 30 سے زائد مختلف سرجریز کرائیں لیکن بعد میں اندازہ ہوا کہ وہ دوسرے کو خوش کرنے کے چکر میں پلاسٹک سرجری کی لت کا شکار ہو چکی ہے۔ بیری اینجی کا کہنا تھا کہ اگر میرا بوائے فرینڈ صرف ایک بار ہی اتنا کہہ دیتا کہ میں خوبصورت ہوں تو یہ سب کچھ نہ کرتی لیکن اب مجھے اپنے اس فیصلے پر بہت افسوس ہے۔

خریدنے والے ملزمان غیر قانونی طور پر انہیں سعودی عرب لے گئے اور وہاں ان سے مبینہ طور پر فحش کام کرواتے تھے۔ ایف آئی اے حکام کے مطابق انسانی اسمگلنگ کے گینگ میں ملوث 6 ملزمان میں سے دو کو گرفتار کر لیا گیا ہے باقی ملزمان کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جا رہے ہیں۔

جوزف کے والد نے مزید بتایا کہ ”جب یہ 9سال کا تھا تب ایک روز اس کی والدہ تاشا نے کمپیوٹر کی سرچ ہسٹری یونہی چیک کی لیکن وہ یہ دیکھ کر دنگ رہ گئی کہ اس کا بیٹا انٹرنیٹ پر فحش مواد کی تلاش بھی کرتا رہتا تھا۔

سرچ ہسٹری سے معلوم ہوا کہ وہ زیادہ تر پرتشدد جنسی ویڈیوز دیکھتا تھا۔ ان فلموں کا اس کے مزاج پر ایسا منفی اثر پڑا کہ وہ ہمہ وقت انتہائی غصے میں رہتا تھا، وہ اپنی عمر کے بچوں کے ساتھ انتہائی جارحانہ سلوک کرتا اور ہر وقت ان کے ساتھ لڑتا رہتا تھا۔وہ اپنی بہنوں پر بھی تشدد کرنے لگا

جس کی وجہ سے اب وہ اس کے قریب بھی نہیں آتیں۔وہ جب کسی بچے یا اپنی بہن پر تشدد کرتا ہے تو ساتھ پرتشدد فحش فلموں جیسی آوازیں بھی نکالتا ہے۔ہمیں تو یقین ہی نہیں ہوتا کہ فحش فلموں کا ایسا نقصان بھی ہو سکتا ہے۔“

انہوں نے کہا کہ دیہی علاقوں میں لوگ اس کے لئے سالانہ کم سے کم۱۲۰۰؍ روپے خرچ کرنے کی پوزیشن میں نہیں ہیں۔ اس کے پیش نظر ان کی کمپنی محض ۱۰۰؍ روپے سالانہ فیس پر عام لوگوں کو انٹرنیٹ دینا چاہتی ہے۔ اس کے تحت گاہک ہر طرح سے انٹرنیٹ کا استعمال کر سکیں گے۔

۳؍جی اور۴؍ جی صلاحیت والے سستے موبائل فون اور ٹیبلٹ بنانے والی ڈاٹاونڈ کے سی ای او نے کہا کہ اب بھی ان کی کمپنی ریلائنس کمیونی کیشنز اور ٹیلی نار کے ساتھ مل کر اپنے گاہکوں کو ایک سال تک مفت انٹرنیٹ خدمات فراہم کر رہی ہے۔ اس کے لئے بہت سی دیگر کمپنیوں سے ان کی بات چیت جاری ہے۔

انہوں نے کہا کہ جو ٹیلی کام کمپنی وی این او انفراسٹرکچر پہلے تیار کرے گی ان کی کمپنی اس کے ساتھ معاہدہ کر کے دیوالی سے پہلے صارفین کو سستی انٹرنیٹ سروس دینا چاہتی ہے۔قابل ذکر ہے کہ ٹیلی کام محکمہ نے اس کیلئے ہدایات جاری کی ہیں جس میں درخواست دینے کے۶۰؍ دن کے اندر اندر لائسنس دینے کی بات کہی گئی ہے۔

وي این او کے لئے ہر ٹیلی سرکل کے لئے ۷.۵؍ کروڑ روپے کی نان ریفنڈیبل فیس دینی ہوگی اور ہر سروس کے لئے الگ الگ فیس لگے گی۔

اس میں گوشت بنانے والے روغنی اور معدنی نمکیات کوٹ کوٹ کے بھرے ہوتے ہیں. قدرت نے اس سستی سبزی میں بہت سے اجزاء سموئے ہوئے ہیں. اس ارزاں سبزی میں کیلشیم‘ پوٹاشیم اور فولادی اجزاء کثرت سے پائے جاتے ہیں. اس کے علاوہ وٹامن اے اور وٹامن بی بھی موجود ہوتے ہیں. یہ کثیر الغذا سبزی‘

قبض کشا ‘ معدے کی سختی‘ جلن اور تیزابیت کو دو کر دیتی ہے. کدو کے بے شمار فوائد ہیں لیکن ہم آپ کو کدو کے جوس کا وہ فائدہ بتاتے ہیں جو عام طور پر لوگوں کو معلوم نہیں .یہ ہے کدو کا جوس ،یہ جوس پینے سے نہ صرف پیشاب کی جلن ختم ہوتی ہے بلکہ یہ آنتوں اور معدے سے تیزابیت اور انفیکشن بھی ختم کرتا ہے.

جوس حاصل کرنے کے لئے ایک پورے کدو کو کدوکش کرنے کے بعد نچوڑ لیا جائے تو خاصی مقدار میں جوس حاصل ہوتا ہے. پیشاب کی تکالیف کے لئے ایک گلاس کدو جوس میں لیموں کا رس ایک چمچ ملا کر روزانہ پیا جائے تو اس مرض سے نجات مل جاتی ہے. کدو اور لیموں کے کھاری اجزاء جلن ختم کرتے ہیں.

جدید ریسرچ کے مطابق پیشاب کے اعضاء میں انفیکشن ہو تو لیموں اور کدو جوس سلفا ادویات کے ساتھ دینا چاہیے کیونکہ ایسی صورت میں پیشاب آور الکلائین کا عمل کرتا ہے.